سعودی خاتون رحف محمد بنکاک سے کینیڈا کے لیے روانہ

کینڈین وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے  اعلان کیا ہے کہ ان   کا ملک سعودی خاتون کو پناہ کا حق دے گا

سعودی خاتون رحف محمد بنکاک سے کینیڈا کے لیے روانہ

گزشتہ ہفتے کے روز سعودی خاتون رحف محمد القنون کو بنکاک ایرپورٹ پر امیگریشن عہدیداروں نے روک دیا تھا اور اسے ملک میں داخل ہونے کی اجازت نہ دے کر اس کا پاسپورٹ بھی ضبط کرلیا تھا۔ اب اس خاتون کو کینیڈا پناہ  کا حق دے گا۔

بنکاک کے  امیگریشن آفس کے چیف  نے اعلان کیا ہے کہ 18 سالہ رحف محمد القنون  ٹورنٹو جانے کے لیے جنوبی کوریا کے دارالحکومت سیول روانہ ہو گئی ہے۔

چیف نے بتایا ہے کہ کینیڈا کے بنکاک میں سفیر نے روانگی سے پیشتر القنون سے ہوائی اڈے پر ملاقات کی،  سعودی  خاتون نے اس کو پناہ کی پیش کش کرنے والے ممالک میں سے کینیڈا کا انتخاب کیا ہے اور اس کی جانب امدادی ہاتھ بڑھانے والے تمام تر ممالک اور اشخاص کا شکریہ ادا کیا ہے۔

ادھر کینڈین وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے  اعلان کیا ہے کہ ان   کا ملک سعودی خاتون کو پناہ کا حق دے گا۔

القنون نے اپنے خاندان کی جانب سے سخت سلوک کا سامنا کرنے کے باعث راہ فرار اختیار کرنے  اور کسی تیسرے ملک میں پناہ لینے کی درخواست کی تھی۔ اس کا کہنا تھا کہ ملک کو واپسی کی صورت میں اس کی  جان کو خطرہ ہے۔

رحف نے  ٹویٹر اکاؤنٹ کے ذریعے   اپنے اس مطالبے کو پیش کیا تھا جس پر  یہ معاملہ عالمی رائے عامہ کے ایجنڈے میں شامل ہوا تھا۔



متعللقہ خبریں