ترکی کے اخبارات سے جھلکیاں

19.10.18

ترکی کے اخبارات سے جھلکیاں

روزنامہ وطن "ایردوان نے گاگاؤزیہ  ترکوں سے خطاب کیا" کے زیرِ عنوان لکھتا ہے کہ صدر رجب طیب ایردوان نے کومرات میں  گاگاؤزیہ ترکوں سے خطاب کیا۔ کومرات میں عنقریب ترک قونصلیٹ جنرل کھولے جانے کا مژدہ دینے والے صدر ایردوان  نے "مولڈووا میں 5 اہم معاہدے طے کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارے باہمی روابط اب کے  بعد مزید تقویت حاصل کریں گے ، ہم یہاں پر ترک قونصل خانے کو کھولتے ہوئے مقامی ترک باشندوں کو خدمات فراہم کریں گے۔ آپ لوگ یہ مت بھولیں کہ بحیرہ اڈریاٹیک سے دیوارِ چین تک  300 ملین کی تعداد میں زندگیاں بسر کرنے والا ایک بڑا کنبہ ہیں۔"

روزنامہ حریت "وزیر البائراک: ترک معیشت  کو در پیش اتار چڑھاؤ کی لہر تھم گئی ہے" عنوان کے تحت لکھتا ہے کہ وزیر خزانہ بیرات البائراک نے  بیلٹ اینڈ روڈ صنعت و تجارت یونین کے  استنبول سربراہی اجلاس میں "ترک معیشت میں  اور مالی منڈیوں میں اتار چڑھاؤ کا سلسلہ رک گیا ہے" اعلان  کرتے ہوئے بتایا ہے کہ امریکی ڈالر کے مقابلے میں  ترک لیرے کی قدر میں 21 فیصد کا اضافہ ہوا ہے۔

روزنامہ سٹار " ساتواں A400M ترک مسلح افواج کے سپرد" عنوان کے تحت لکھتا ہے کہ ترک مسلح افواج کی حربہ مواصلات صلاحیت میں  اضافہ کرنے والے اور "اڑان بھرے والا قلعہ" کے نام سے منسوب کر دہ     A400M  قسم کے مزید ایک طیارے کو  مسلح افواج کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ ترک فضائیہ کی ضروریات کو پورا کرنے  کے زیر مقصد   ترک ادارہ برائے دفاعی صنعت  کی جانب سے بروئے کار لائے جانے والے  منصوبے کے دائرہ کار میں  ساتویں طیارے کو تیار کردہ مقام ہسپانوی شہر سویلا  میں تمام تر ضروری تجربات اور نگرانی  کے بعد ترک پائلٹ  اڑان  بھرتے ہوئے ترکی لائے ہیں۔

روزنامہ خبر ترک "پاموک قلعے  نے 9 ماہ میں سیاحوں کا ریکارڈ رتوڑ ڈالا" جلی سرخی لگاتے ہوئے لکھتا  ہے کہ ترکی کے اہم ترین قدیم علاقوں میں شامل پاموک قلعے   کہ جسے اقوام متحدہ کے تعلیمی، سائنسی اور ثقافتی امور کے ادارے  یونیسکو  کی عالمی ثقافتی ورثوں میں  شامل کیا  گیا ہے ، کی سیر کو آنے والے سیاحوں کی تعداد ایک ملین ساڑھے سات لاکھ  تک پہنچ چکی ہے ، یہ تعداد گزشتہ برس کے مقابلے میں 40 فیصد زیادہ ہے۔ "سفید جنت" کے نام سے منسوب کردہ پاموک قلعے میں  سیاحوں کی دلچسپی میں ہر گزرتے برس کے ساتھ  کافی حد تک اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔

روزنامہ صباح " ' اخلاط آجے'  نامی فلم لندن فلمی میلے میں" زیر عنوان  اپنی خبر میں لکھتا ہے کہ نوری بلگے جیلان کی ہدایت کاری کی حامل  اخلاط آجے یعنی  جنگلی جھاڑی نامی فلم کو لندن فلمی میلے کے دائرہ کار میں  فلموں کے شائقین کے سامنے پیش کیا گیا۔ لندن کے مشہور  سینما ہال کرزون مے فیئر  میں دکھائے جانے والے اس فلم کے شو کو ہدایت کار جیلان نے بھی  دیکھا۔

 

 



متعللقہ خبریں