مقبوضہ مشرقی القدس میں ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف مظاہرے

مشرقی القدس، دریائے اردن کے مغربی کنارے اور الخلیل میں ٹرمپ کے قدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے خلاف احتجاجی مظاہرے، بیسیوں گھڑ سوار اور پیادے اسرائیلی پولیس اہلکاروں کو مقبوضہ مشرقی القدس کے اہم مقامات پر متعین کر دیا گیا

مقبوضہ مشرقی القدس میں ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف مظاہرے

مقبوضہ مشرقی القدس میں امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف مظاہروں کا  سلسلہ شروع ہو گیا ہے۔

مشرقی القدس کے  علاقے ایسکی شہر کے مرکزی داخلی مقامات میں سے دمشق دروازے پر جمع فلسطینی ٹرمپ کے قدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کر رہے ہیں۔

مظاہرین قدس پر ہماری جانیں قربان کے نعرے لگا رہے ہیں اور  اسرائیلی پولیس مظاہرے میں مداخلت کر رہی ہے۔

قدس کی گلیوں میں موجود کشیدگی بدستور جاری ہے۔

بیسیوں گھڑ سوار اور پیادے اسرائیلی پولیس اہلکاروں کو مقبوضہ مشرقی قدس کے اہم مقامات پر متعین کیا گیا ہے۔

دوسری طرف  دریائے اردن کے مغربی کنارے میں بھی متعدد مقامات پر مظاہرے کئے جا رہے ہیں۔

اسرائیلی فوجی الخلیل کے مظاہروں میں بھی مداخلت کر رہی ہے۔

عینی شاہدوں کے مطابق اسرائیلی فوجی مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے آنسو گیس اور اصلی اور ربڑ کی گولیوں  کا استعمال کر رہے ہیں تاہم فلسطینی پتھروں سے جواب دے رہے ہیں۔

بیت اللحم اور رملّہ میں بھی اسرائیلی فورسز مظاہروں میں مداخلت کر رہی ہیں۔



متعللقہ خبریں