صدر ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف سخت عالمی ردعمل مگر نتیجہ ؟

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے  فیصلے کے خلاف دنیا  بھر میں  شدید رد عمل ہو رہا ہے جبکہ متعدد ممالک نے فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یک جہتی اور دو ریاستی حل کی ضرورت پر زور دیا ہے

صدر ٹرمپ کے فیصلے کے خلاف سخت عالمی ردعمل مگر نتیجہ ؟

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کے  فیصلے کے خلاف دنیا  بھر میں  شدید رد عمل ہو رہا ہے

  پاکستانی  وزارت  عظمی کے ترجمان    کا امریکہ کے صدر کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کواسرائیل کادارالحکومت تسلیم کرنے کےاعلان کے حوالے پر شدید تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے کہنا تھا کہ فلسطین کوآزاداورمضبوط ریاست کادرجہ دیاجائے، پاکستان فلسطینیوں کیساتھ اظہاریکجہتی کرتاہے  جبکہ ایسے ا قدامات عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہیں۔

چین کی وزارت خارجہ نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے مقبوضہ بیت المقدس کا اسرائیل کا دارالحکومت کا اعلان پر رد عمل دیتے ہوئے کہنا تھا کہ امریکہ کے اس اقدام سے خطے میں کشیدگی  پھیلے گی۔

مقبوضہ بیت المقدس کے معاملے پر دونوں فریقین اس معاملے پر احتیاط سے کام لیں۔

سعودی فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے بھی امریکی صدر کو خبردار کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر کے مسلمان مقبوضہ بیت المقدس اور مسجد اقصیٰ کے تقدس کو اپنے ایمان کا حصہ سمجھتے ہیں اور ان مقامات سے مسلمانوں کی وابستگی بہت گہری ہے۔ اس نازک معاملے پر کسی بھی متنازع امریکی فیصلے سے مسلمانوں کے مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچے گی، امریکہ  کا یہ فیصلہ فلسطین اور اسرائیل کے درمیان امن کے عمل کو ناصرف متاثر کرے گا بلکہ خطے میں تناؤ اور کشیدگی میں اضافے کا بھی باعث ہوگا۔

دارالعوام   سے گفتگو کرتے ہوئے برطانوی وزیر اعظم تھریسا مے  کا کہنا تھا کہ مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرنے کے حوالے سے وہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے بات کریں گی۔

 ان کا مزید کہنا تھا کہ برطانیہ مسئلے کے حل کے لئے اسرائیلی اور فلسطینی قیادت کے درمیان مذاکرات کا حامی ہے اور وہ امریکی صدر کو بھی اپنے اسی مئوقف سے آگاہ کریں گی۔

ایران نے بھی صدر ٹرمپ کے اعلان کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس فیصلے سے اسرائیل کے خلاف ایک اور انتقامی مہم   شروع ہو سکتی ہے۔

یہ اشتعال انگیز اور غیر دانشمندانہ فیصلہ سخت اور پرتشدد ردعمل کا باعث بن سکتا ہے۔

لبنان کے وزیر اعظم سعد حریری نے کہا کہ ہمارا ملک بھرپور طریقے سے فلسطینیوں کے ساتھ اپنے حمایت کا اعلان کرتا ہے اور ان کا علیحدہ ملک جس کا دارالحکومت یروشلم ہو قائم کرنے کے مطالبے کا ساتھ دیتا ہے۔

مصر نے بھی  امریکہ کی جانب سے یروشلم کو اسرائیلی دارالحکومت تسلیم کرنے کا اعلان مسترد کر دیا ہے ۔

 

 



متعللقہ خبریں