صدر ایردوان کی صدر ممنون حسین سے صدر ٹرمپ کے فیصلے سے متعلق ٹیلی فون پر بات چیت

رات گئے  دونوں رہنماوں کے درمیان ہونے والی بات چیت میں صدر ایردوان نے   کہا کہ سن 1967 کی سرحدوں کے اندر رہتے ہوئے  جب تک مشرقی القدس کو فلسطین  کا دارالحکومت نہیں بنالیا جاتا اس وقت تک  مشرقِ وسطیٰ میں امن قائم نہیں ہوسکتا ہے

صدر ایردوان کی صدر ممنون حسین سے  صدر ٹرمپ کے فیصلے سے متعلق ٹیلی فون پر بات چیت

ترکی کے صدر رجب طیب ایردوان نےکہا ہے کہ  امریکہ کے صدر  ٹرمپ کے  القدس کو اسرائیل کے دارالحکومت کے طور پر تسلیم کیے جانے کے فیصلے   سے مشرقِ وسطیٰ میں  امن   کے قیام کو شدید نقصان پہنچے گا ۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار     پاکستان کے صدر  ممنون حسین سے ٹیلی فون پر بات چیت کرتے ہوئے کیا۔

رات گئے  دونوں رہنماوں کے درمیان ہونے والی بات چیت میں صدر ایردوان نے   کہا کہ سن 1967 کی سرحدوں کے اندر رہتے ہوئے  جب تک مشرقی القدس کو فلسطین  کا دارالحکومت نہیں بنالیا جاتا اس وقت تک  مشرقِ وسطیٰ میں امن قائم نہیں ہوسکتا ہے۔

انہوں نے  13 دسمبر کو استنبول میں  تنظیم اسلامی کانفرنس  کا ہنگامی  سربراہی اجلاس   بھی طلب کرلیا ہے   ۔صدر ایردوان نے  اسی روز مختلف اسلامی ممالک کے رہنماوں سے بھی ٹیلی  فون پر بات چیت کی ہے  اور صورتِ حال  کا تمام پہلووں سے جائزہ بھی لیا ہے۔

 



متعللقہ خبریں